Author Topic: ادھوری غزل  (Read 1429 times)

0 Members and 1 Guest are viewing this topic.

Offline Amjad Qarar

  • Baask Poet
  • ***
  • Posts: 96
  • Karma: 6
ادھوری غزل
« on: July 18, 2010, 09:46:41 AM »


مالک! مری بے  سود  عبادت کا  ثمر دے
بھوکا   ہوں  مجھے  ایک  نوالہِ  تر  دے

بلوہ  کہیں  ہھر  سے نہ اجاڑے  میرا کنبہ
ہجرت کہیں پھر سے  ہمیں تقسیم نہ کر دے

براہیمی  عبادت  سے کہاں  بھوک مٹی ہے
اللہ  مری    اولاد  کو  آزر  کا  ہنر  دے