Author Topic: جگمگاتی تھیں تمنائیں ستاروں کی طرح  (Read 1530 times)

0 Members and 1 Guest are viewing this topic.

Offline hafiz_aaskani1

  • Baask Poet
  • ***
  • Posts: 195
  • Karma: 18
جگمگاتی تھیں تمنائیں ستاروں کی طرح
« on: February 11, 2011, 02:56:55 AM »

(1)جگمگاتی تھیں تمنائیں ستاروں کی طرح
دن سہانے تھے کبھی دل کے بہاروں کی طرح

(2)ترجماں بن کے مرے دل کی شبستانی کا
اشک پلکوں پہ چمکتے ہیں ستاروں کی طرح

(3)قلزمِ حسن مقابل ہے وہ اللہ اللہ
پیاس آنکھوں کی نہیں بجھتی کناروں کی طرح


(4)یہ تو موقوف معبر کی بصیرت پہ ہے اب
راز ہم نے تو بتائے ہیں اشاروں کی طرح

(5)دشمنی بادِ صباسے تری کیا ہے اے دل؟
ایک جھونکے سے بھڑکتا ہے شراروں کی طرح

(6)نوحہ خوانوں کو بھی روتا ہے یہ دل آج عطا
   ارضِ بولان کے ویران نظاروں کی طرح


يا رب‏!‏ مناهماياني ردء بكن كه ترا دوست انت