Author Topic: میرے شہر کی سونی سڑکوں پہ آج موت کا سا سناٹا ہے  (Read 1482 times)

0 Members and 1 Guest are viewing this topic.

Offline Imtiaz Irani

  • Junior Baask
  • **
  • Posts: 56
  • Karma: 8
  • Mani dideag o saa o goman toay.

میرے شہر کی سونی سڑکوں پہ
آج موت کا سا سناٹا ہے
میری دھرتی کے کوہ و دامن
اور بستیوں کے در و دیوار

مادر وطن کا چھپہ چھپہ
ٌاج پل پل آہیں بھرتی ہیں
اُن بیتے دنوں کی یاد میں
اب ہر پل اشک بہاتی ہیں

جب دھرتی کے جیالے جوان
مست دھنوں پہ آزادی کے
ڈھول کی تھاپ پہ رقص کناں
ہر سو رونق پھیلا تے تھے

میری دھرتی کے ان جیالوں کو
آج قابض سر راہ اٹھاتا ہے ،
اور ماں کی ضعیف آنکھوں کو
انتظار کا تحفہ دے جاتا ہے

بے قرار سے اس کی آنکھیں پھر
صدیوں دروازے کو تکتی ہیں
گوہ لخت جگر کی مسخ لاش
ویرانے سے کبھی مل جاتی ہے

میرے شہر کی آزاد فضائوں میں
قابض ،موت کی ہولی کھیلتا ہے
آہ! اہل وطن پہ تاری بس
اک موت کا سا سناٹا ہے
مھرءِ ھمبراہ دردءُ غم ھور اَنت چیا ؟
عشق شرکن اِنت چمءِ اَرس سور اَنت چیا ؟